Home / Archives / بلوچستان کے واک و اختیارکی جدوجہد جاری رہے گی ملک میں کوئی غیر جمہوری اقدام برداشت نہیں کرینگے، بی این پی

بلوچستان کے واک و اختیارکی جدوجہد جاری رہے گی ملک میں کوئی غیر جمہوری اقدام برداشت نہیں کرینگے، بی این پی

کوئٹہ: بی این پی کسی بھی غیر جمہوری اقدام کو برداشت نہیں کریگی ، جمہوریت پر شب خون مارنے کی بھرپور مخالفت کریں گے ماضی میں بھی ماورائے آئین اقدامات کئے گئے جس سے جمہور اور جمہوری ادارے پروان نہیں چڑھ سکے پارٹی بلوچ اور بلوچستانیوں کے جملہ مسائل کے حل کیلئے کوشاں ہے ۔

بلوچستان کے قومی اجت عی معاملات اولین ترجیحات میں شامل ہیںآمریت سے لولی لنگڑی جمہوریت بہتر ہے جمہوری اداروں کا ستحکام ضروری ہے عوا م کے امنگوں کی حقیقی معنوں میں ترج نی کر رہے ہیں ۔

بلوچستان نیشنل پارٹی کے مرکزی کمیٹی کا دو روزہ اجلاس کراچی میں 19اور20دسمبر کو کراچی میں منعقد ہوا جس کی صدارت پارٹی قائد سردار اختر جان مینگل نے کی جبکہ اجلاس کی کارروائی پارٹی کے سیکرٹری ج ل سینیٹر ڈاکٹر جہانزیب ج لدینی نے چلائی جس میں پارٹی کی تنظیم کاری اور سیاسی صورتحال پر سیر حاصل بحث کی گئی ۔

اجلاس کے ابتداء میں پارٹی کے مرکزی کمیٹی کے سابق اراکین سردار صدیق دہوار اور آربی کھوسہ کو ان کی جہد پر زبردست الفاظ میں خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا گیا کہ ان کی جدوجہد کو ہمیشہ یاد رکھا جائے گا جنہوں نے پارٹی میں ثابت قدمی کے ساتھ جدوجہد کی اور ان کی جدوجہد ہ رے لئے مشعل راہ ہے۔

انہوں نے مستقل مزاجی کے ساتھ پارٹی کے فکر و فلسفے کی پرچار کی مرحومین کے ایصال ثواب کیلئے فاتحہ خوانی بھی کی گئی اجلاس میں کہا گیا ہے پارٹی بلوچستان میں قومی جمہوری سیاست کے فروغ کو یقینی بنا کر عملی انداز میں بلوچ اور بلوچستانیوں کے جملہ مسائل کے حل کیلئے کوشاں ہے ۔

اس بات کا اعادہ کرتے ہیں کہ بلوچستان کی حق حاکمیت حق ملکیت ساحل وسائل پر دسترس کی جدوجہد کو مزید دوام دیں گے جہد کو غیر متزلزل انداز میں آگے بڑھا رہے ہیں بی این پی بلوچستان کی سب سے بڑی عوامی طاقت بن چکی ہے عوامی قوت سے ہی ہم معاشرے میں بلوچستان کے ساحل وسائل کی بقاء ، سلامتی اور قومی تشخص کی جدوجہد کو آگے بڑھا رہے ہیں ۔

ہ ری ہمیشہ کوشش رہی ہے کہ ہم آمرانہ سوچ اور منفی رجحانات کے خا ے جمہوریت اور جمہوری اداروں کی مضبوطی کو یقینی بنائیں میگا پروجیکٹس کے بلوچستان کے واک و اختیار اور حقیقی ترقی تب ممکن ہو گی جب ہ ری حق حاکمیت کو تسلیم اور ساحل وسائل کا اختیار بلوچستان کو دیا جائے سی پیک پر موقف واضح اور غیر متزلزل ہے اسی مثبت فکر و سوچ کو آگے بڑھانے کی ضرورت ہے ۔

بلوچستان باوسائل سیاسی و جغرافیائی اہمیت کی حامل سرزمین ہے یہاں کے عوام آج بھی معاشی اور معاشرتی مسائل سے دوچار ہیں ہ ری جدوجہد ان شہداء کے مشن کی تکمیل ہے جنہوں نے بلوچستان کے وسیع تر مفادات اورقومی سیاست کو تقویت دینے کیلئے قربانیاں دیں ۔

قومی جمہوری ج عت ہونے کے ناطے اپنی سیاسی قومی ذمہ داریوں کو نبھاتے رہیں گے کیونکہ قومی مفادات کی ترجیح ہ را مقصد رہا ہے اس بات کا اعادہ بھی کرتے ہیں کہ بلوچستان اور ملکی سطح پر جمہوری اداروں کے استحکام کو یقینی بنانے کیلئے بھرپور جدوجہد کی جائے گی اور کسی بھی ماورائے آئین و قانون اقدامات کو برداشت نہیں کیا جائیگا ۔

اجلاس میں کہا گیا کہ بلوچستان نیشنل پارٹی جو قومی جمہوری ترقی پسند روشن خیال ، قوم دوست ، وطن دوست سیاسی قوت ہے پارٹی کو مزید مضبوط بنانے اور جدید بنیادوں پر استوار کریں گے ۔

اس حوالے سے مثبت تجاویز پر غور و خوض کیا گیا کیونکہ ایک مضبوط قومی جمہوری پارٹی ہی بلوچستان کے گھمبیر پیچیدہ اور بحرانی سیاسی حالات کا مقابلہ تب کر سکے گی جب بلوچ عوام اور بلوچستانیوں کو مضبوط ، مستحکم سیاسی قوت موجود ہو آمر ہو یا سول ڈکیٹیٹر ہر دور میں بلوچستان کے قومی معاملات کو اجاگر کیا ۔

پارٹی کے رہن ؤں و کارکنوں کو قتل و غارت گری کا نشانہ بنانے کے باوجود دیوار سے لگانا ممکن نہ ہو سکا کیونکہ پارٹی عوامی سطح پر مضبوط ہے جدید بنیادوں پر استوار کر نے کی سوچ اسی لئے ہے کہ ہم سیاسی شعوری نظریاتی فکر کو مضبوط بناتے ہوئے عوام کو ذہنی شعوری طور پر تیار کریں جس سے عوام بیدار ہوں اور سمجھ سکیں کہ انصافیوں اور محرومیوں کے اسباب کو سمجھ کر باریک بینی سے جائز ہ لے سکیں ۔

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا جلد از جلد تنظیم کاری کے مراحل کو بلوچستان بھر میں مکمل کیا جائے تاکہ پارٹی کے جمہوری ادارے مزید مضبوط ہوں ایک مضبوط سیاسی ج عت ہی بلوچستان کے عوام کے احساس و جذبات کی حقیقی معنوں میں ترج نی کر سکتی ہے ۔

بلوچ علاقوں میں نادرا کی رجسٹریشن نہ ہونے کے برابر ہے اس حوالے سے نادرا ارباب و اختیار کی ذمہ داری بنتی ہے کہ رجسٹریشن کے حوالے سے جو مسائل درپیش ہیں انہیں حل کرے پارٹی بھی قریبی روابط رکھ کر کوشش کریگی کہ رجسٹریشن و شناختی کارڈز کے اجراء کے عمل کو مزید تیز کیا جائے آئینی حوالے سے نادرا حکام اس بات کے پابند ہیں کہ عوام کا بنیادی حق انہیں فراہم کیا جائے ۔

اجلاس میں کہا گیا ہے کہ پارٹی کو بلوچستان میں مزید مضبوط بنانے کیلئے تجاویز پیش کرنے کا مقصد یہی تھا کہ عوام کے ساتھ قریبی روابط کے عمل کو تیز کیا جائے تاکہ پارٹی رہن ؤں وکارکنوں کو علم ہو سکے کہ عوام کے بنیادی مسائل کیا ہیں بلوچستان کے عوام آج کسمپرسی اور مختلف س جی مسائل کا سامنا کر رہے ہیں حکمران عوام کے مسائل کو حل کرنے میں ناکام ہو چکے ہیں ۔

موجودہ دور میں س جی و معاشی مسائل میں اضافہ ہوا ہے جو اس بات کا ثبوت ہے کہ حکمرانوں نے عوامی مسائل کو نظر انداز کیا کرپشن ، اقرباء پروری پر حکمرانوں کی توجہ مرکوز ہے جس کی وجہ سے آج بلوچستان بالخصوص بلوچ علاقے مختلف مسائل سے دوچار ہیں ۔

احساس محرومی کا عنصر تب ہی جنم لیتا ہے جب حکمران اپنی ذمہ داریاں پوری نہ کریں – دریں اثناء ملک عبدالرح ن خواجہ خیل کے بھائی ، حاجی غلام حسین بلوچ کے والد اور ڈاکٹر عبدالمصد میروانی کی والدہ ، غفور مینگل کی بھابی کے ایصال ثواب کیلئے فاتحہ خوانی کی گئی –

Source: dailyazadiquetta.com

Share on :
Share

About Administrator

Check Also

PTI voted for Sanjrani on ‘order from top’: Sirajul Haq

LAHORE: Questioning the credibility of the Senate after its recent elections and adding fuel to …

Leave a Reply

'
Share
Share
Social Media Auto Publish Powered By : XYZScripts.com