Home / Archives / صوبوں کی جغرافیائی ، لسانی اور تاریخی بنیادوں پر تشکیل نو کی جائے، بی این پی

صوبوں کی جغرافیائی ، لسانی اور تاریخی بنیادوں پر تشکیل نو کی جائے، بی این پی

تونسہ شریف : ڈیرہ غازی خان ‘ راجن پور بلوچستان کے اٹوٹ انگ ہیں صوبوں کی از سر نو تشکیل کر کے انہیں بلوچستان میں شامل کیا جائے جغرافیائی ‘ لسانی اور تاریخی بنیادوں پر تشکیل کی جائے شہداء کوہ سلی ن کی قربانیاں ہ رے لئے مشعل راہ ہے بلوچوں کو متحد کرنے کیلئے اپنا کردار ادا کیا ہے بلوچستان جہاں بھی رہتے ہیں انہیں دانستہ طور پر انسانی بنیادی ضروریات زندگی سے محروم رکھا گیا ہے

اکیسویں صدی کے حالات کا تقاضا بھی یہی ہے کہ بلوچ منظم ہو کر اپنے زبان ‘ ثقافت کے تحفظ کو اولیت دیں ساحل اور قدرتی دولت سے مالا مال ہونے کے بعد بلوچ کمسپرسی کی زندگی گزار رہے ہیں

ان خیالات کا اظہار بلوچستان نیشنل پارٹی اور بی ایس او کی جانب سے شہداء کوہ سلی ن کی یاد میں تونسہ شریف میں منعقدہ جلسہ عام سے بلوچستان نیشنل پارٹی کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات آغا حسن بلوچ ایڈووکیٹ ‘ بلوچستان نیشنل موومنٹ کے قائد ڈاکٹر حئی بلوچ ‘ بی ایس او کے مرکزی وائس چیئرمین خالد بلوچ ‘ بی این پی کے یونس بلوچ ‘ ملک صلاح الدین شاہوانی ‘ ضلعی آرگنائزر ڈیرہ غازی خان ذوالفقار بلوچ ‘ نوید بزدار بلوچ ‘ ملک گامن خان مری ‘ وڈیرہ غفار کھیتران ‘ بلوچ کونسل کے ممبر جمیل بلوچ ‘ سعدیہ بلوچ ‘ رب نواز لغاری ‘ فیض اللہ بزدار نے خطاب کرتے ہوئے کیا

اس موقع پر عتیق بلوچ ‘ نوریز مری ‘ عمران خجک ‘ وحید مری و دیگر بھی موجود تھے مقررین نے کہا کہ شہداء کوہ سلی ن کی جدوجہد ہ رے لئے مشعل راہ ہے اور ان کی جدوجہد سے بلوچ قومی جہد مضبوط ہو رہی ہے ہر دور میں بلوچوں کو بزور طاقت صفحہ ہستی سے مٹانے کی کوششیں کی گئیں قوموں کو بزور طاقت زیر نہیں کیا جا سکتا

بی این پی کی قومی جمہوری سیاست اور پارٹی کے سیاسی پروگرامز اور منشور میں یہ واضح ہے کہ ہ ری جہد بلوچستان کے ان علاقوں کو شامل کرانا ہے جنہیں سازش کے تحت دوسروں صوبوں میں شامل کیا جائے جن میں ڈیرہ غازی خان ‘ راجن پور ‘ خان گڑھ شامل ہیں جو تاریخی ‘ جغرافیائی اور لسانی بنیادوں پر ان علاقوں کی اک یتی آبادی اب بھی بلوچ ہے صوبوں کی از سر نوتشکیل کی جائے

مقررین نے کہا کہ سردار اختر جان مینگل کی قیادت بہر بلوچ ‘ خان گڑھ ‘ ڈیرہ جات کے بلوچوں کو منظم و متحد کرنے کیلئے شعوری فکر کو اجاگر کر کے اپنی جہد کو تقویت دے رہے ہیں پارٹی نے کبھی بھی قومی معاملات پر مصلحت پسندی کا مظاہرہ نہیں کیا آج بھی بلوچ قوم کے جملہ مسائل کے حوالے سے ہ را موقف واضح رہا ہے ہم اپنی جدوجہد کو بلوچوں کے حقیقی ترقی و خوشحالی کیلئے پروان چڑھا رہے ہیں

بلوچوں کی تین بڑی زبانیں بلوچی ‘ براہوئی اور کیھترانی کی ترقی و ترویج کیلئے بھی جدوجہد کر رہے ہیں مقررین نے کہا کہ اس ملک میں جتنے بھی آمر و سول ڈکٹیٹر آئے انہوں نے بلوچوں کیخلاف آپریشن کئے مشرف نے مظا کی ہد کر دی آج شہید نواب اکبر خان بگٹی امر ہو گئے ہیں مشرف آج بھی بیرون ملک منہ چھپا کر گھوم رہے ہیں

مقررین نے کہا کہ بلوچ ساحل وسائل سے مالا مال سرزمین ہے اس کے وارث آج بھی کسمپرسی ‘ معاشی تنگ ‘ غربت و افلاس کی زندگی گزرانے پر مجبور ہیں جتنے بھی حکمران آئے انہوں نے ہ رے وسائل لوٹے بلوچوں کو نظر انداز کر کے معاشی استحصال کا نشانہ بنایا

مقررین نے کہا کہ بی این پی ترقی و خوشحالی کے خلاف نہیں بلکہ ہ ری جدوجہد قومی و جمہوری طریقے سے تقویت حاصل کر رہی ہے قومی مفادات پر کبھی بھی سودا بازی نہیں جہد کو عبادت کا درجہ دیا

شہید حبیب جالب بلوچ ‘ میر نور الدین مینگل سمیت دیگر شہداء کی قربانیاں ہ رے لئے مشعل راہ ہے پارٹی کو دیوار سے لگانے کی ام سازشیں ناکام رہیں آج بھی ضرورت اس امر کی ہے کہ سی پیک منصوبے میں بلوچوں کو اولیت دے کر مسائل کو حل کیا جائے

ہ رے حق ملکیت و حاکمیت کو تسلیم کیا جائے انتخابات میں ہ را مینڈیٹ چھینے والے نے سیاست سے دور نہیں کر سکے عوامی ح یت بی این پی کو حاصل ہے 2018ء کی تیاریاں شروع کر دی ہیں کرپٹ اور نااہل حکمرانوں کیلئے میدان خالی نہیں چھوڑیں گے اپنی قومی جمہوری واک و اختیار کو تقویت دیتے رہے ہیں آئندہ انتخابات میں کامیابی بی این پی کی ہو گی کرپٹ اور نااہل حکمرانوں کو شکست فاش دیں گے ۔

Source: dailyazadiquetta.com

Share on :
Share

About Administrator

Check Also

نئے وزیراعل ٰی نے بلوچستان کے حقوق پر کوتاہی برتی تو مدمقابل کھڑے ہونگے،سرداراخترمینگل

کوئٹہ: بلوچستان نیشنل پارٹی کے سربراہ سردار اختر جان مینگل نے کہا ہے کہ نئے …

Leave a Reply

'
Share
Share
Social Media Auto Publish Powered By : XYZScripts.com