Home / Archives / بلوچستان کے وسائل کو مان غنیمت سمجھ کر ہڑپ کیا جا رہا ہے، بی این پی

بلوچستان کے وسائل کو مان غنیمت سمجھ کر ہڑپ کیا جا رہا ہے، بی این پی

کوئٹہ: بلوچستان نیشن پارٹی کے رہن ؤں نے کہا ہے کہ بلوچ عوام اپنے قومی بقاء سلامتی اور قومی تشخص کی بحالی کی وجود کو برقراررکھنے کے لئے آنیوالے چیلنجز اور بحرانوں کو مقابلہ اور صف بندی کے لئے پارٹی کے پلیٹ فارم پر متحد ومنظم ہو کر قومی تحریک میں اپنا فعال کردار ادا کرے ۔

پارٹی نے جس انداز میں بلوچستانی عوام کی مجموعی ، قومی سیاسی جملہ حقوق کے لئے سیاسی اور جمہوری انداز میں جو اصولی موقف اپنایا ہے اور جدوجہد میں مصروف عمل ہے جو اس بات کی غ زی کر تا ہے کہ پارٹی حقیقی معنوں میں یہاں کے عوام کی حقوق کی نجات دھندہ ج عت ہے ۔

ان خیالات کا اظہار کلی بنگلزئی سبزل روڈ کوئٹہ میں محمد رفیق بنگلزئی اور حاجی ہیبت خان بنگلزئی ، غلام نبی بنگلزئی کی قیادت میں 40 افراد کی بی این پی میں شمولیت کے موقع پر منعقدہ پروگرام سے خطاب کر تے ہوئے پارٹی کے مرکزی ہومن رائٹس سیکرٹری موس ٰی بلوچ ، مرکزی کمیٹی کے اراکین اختر حسین لانگو، غلام نبی مری، جاوید بلوچ، سردار عمران بنگلزئی، ضلعی سینئر نائب صدر یونس بلوچ، میر غلام رسول مینگل، ملک محی الدین لہڑی، اسد سفیر شاہوانی، احمد نواز بلوچ، آغا خالد شاہ دلسوز، ٹکری منیر احمد بنگلزئی، حاصل خان بلوچ اورماما پیر بخش بنگلزئی نے خطاب کر تے ہوئے کیا ۔

انہوں نے پارٹی میں نئے شامل ہونیوالے پارٹی دوستوں کو مبارکباد پیش کر تے ہوئے کہا ہے کہ اس مشکل وقت میں یہاں کے باشعور عوام کی پارٹی میں شمولیت سے یہ عیاں ہو تا ہے کہ وہ اپنے قومی حقوق کے لئے پارٹی کی جدوجہد اور سیاست سے مکمل اعت د کر تے ہیں کیونکہ پارٹی نے کبھی بھی یہاں کے عوام کی اعت د کو ٹھیس نہیں پہنچایا اور یہاں کے عوام کی احساسات ، جذبات اور ارمانوں کو پائیہ تکمیل تک پہنچا نے کے لئے قومی تحریک میں کلیدی کردار ادا کیا ۔

انہوں نے کہا ہے کہ حکمران اور بااختیار قو تیں گزشتہ 70 سالوں سے یہاں کے وسائل کو مال غنیمت سمجھ کر ہڑپنے میں مصروف عمل اپنے توسیع پسندانہ پالیسیوں اور آمرانہ طر زحکمرانی میں مصروف عمل ہے انہیں بلوچ عوام کی پس ندگی ، احساس محرومی کو دور کرنے واک واختیار کی حق حا کمیت ، ترقی وخوشحالی ، روزگار، صحت اور دیگر بنیادی ضروریات زندگی سہولیات دینے سے کوئی دلچسپی نہیں ہے اور نہ انہیں بلوچوں کی مفادات فکر ہے ۔

انہیں صرف بلوچستان کی قومی دولت ، ساحل ووسائل سے غرض ہے اور وہ اپنے ان منصوبوں کو پروان چڑھانے میں مصروف عمل ہے۔

انہوں نے کہا ہے کہ قدرتی دولت سے مالا مال خطے کی حقیقی وارث آج بھی اکیسویں صدی میں بنیادی ضروریات زندگی پانی جیسے سہولت سے محروم ہے جو کہ رواں روکھے گئے پالیسیوں کی منہ بولتا ثبوت ہے۔

Source: dailyazadiquetta.com

Share on :
Share

About Administrator

Check Also

CPEC would only be favorable for foreigners: Akhter Mengal

QUETTA: China Pakistan Economic Corridor (CPEC) has nothing to do with the native people; it …

Leave a Reply

'
Share
Share
Social Media Auto Publish Powered By : XYZScripts.com