Home / Archives / بیورو کریسی،لبزانک ءُ محمد اسحاق

بیورو کریسی،لبزانک ءُ محمد اسحاق

نبشتہ کار: اقبال زھیر بلوچ۔

کیچ ءِ زمین ءَ باز نام پیدا کتگ،اے زمین ءِ سر مدام پہ بہر چست انت۔برے وتی پنو ءِ سرا پہر بندیت برے وتی فدا ءِ سرمچاری ءِ سرا۔اگاں گپ لبزانک ءِ بہ بیت گڈا محمد اسحاق ءِ نام لڑ ءَ چہ درستاں برز تر انت۔کیچ ءَ وَ اسحاق یے پیدا کتگ بلے شال ءِ دمک ءُ دمگ ھمے مرد ءَ عطا شاد ءِ نام ءَ پجہ کار انت۔
منی چماں اسحاق یک بیوروکریٹے بوتگ بلے عطا شاد مئے شاعری ءِ مستریں “دیوتا” بوتگ۔
پہ اے ھند ءِ رسگ ءَ آئی مزنیں پندے جتگ،بلاھیں سپرے کتگ۔
کیچ ءَ دانکہ شال ءِ سپر۔
چہ گورنمنٹ ھائی اسکول تربت ءَ دانکہ گورنمنٹ کالج شال ءِ سپر۔
ریڈیو پاکستان ءَ شنگکار ءُ کسمانک نویسی ءَ دانکہ ڈارئیکٹر جنرل آرکیولوجی ءِ سپر۔
روچ گر ءُ شپ سھار اندیم ءَ دانکہ سنگاب ءُ برفاگ ءِ سپر۔
بلوچی لبزانک ءِ تہ ءَ دو نام ھست کہ بہ شموشگ نہ بنت۔اے دوئیں مرد بیوروکریسی ءِ تہ ءَ بوتگ انت بلے آھانی لبزانکی بالاد ءِ تہ ءَ یا ساچشتانی تہ ءَ ھچ وڑیں کمی گیشی یے نہ یتکگ۔اے دوئیں نام عطا شاد (شاعری) ءُ منیر احمد بادینی (ردانک) انت۔ایشانی ازم ءَ پیشداشتگ کہ بیوروکریٹے ءِ دل ءُ جان گوں وتی گلزمین ءَ بندوک انت،انچو کہ عطا گشیت؛
چمے بہ بیت پہ گندگ ءَ
گوشے بی بیت پہ اشکنگ
عطا ءِ پگر،ھیال ءُ لیکہ درس گوں نوکی (جدیدیت) ءَ ھمدپ انت،عطا ءِ شاعری ھچ کوھن نہ بیت،ھر عھد ءِ مانزمان انت،ھر وھد ءَ نوک ءُ تاجگ انت۔
عطا بلوچی ءَ ابید اردو ءِ ھم یک بلاھیں شاعرے بوتگ،من پیسرا جاگھے ءَ اے گپ نویستگ ات ءُ مرچی پدا نویسگ ءَ اوں ئے کہ آ چہ وتی وھد ءِ باز مزن نامیں اردو شاعراں چہ مستریں شاعرے بوتگ،اردو شاعری ءَ را آئی بلوچی ءِ رنگ بکشاتگ انت۔
عطا ھر ھساب ءَ مئے لبزانک ءِ،مئے شاعری ءِ،مئے زبان ءِ مستریں شاعر بوتگ۔آئی کتگیں کارانی سرا ما علم ءُ زانت ءِ نوکیں دروازگ پچ کت کناں۔عطا شناسی ءِ درگت ءَ پنچ نام بلوچ تاریخ ءِ تہ ءَ ھچبر شموشگ نہ بنت،چہ ایشانی گرانبھائیں کاراں بگندے عطا شاد ءِ ارواہ باز وش بوتگ۔
1) ڈاکٹر عرفان احمد بیگ (پی-ایچ-ڈی عطاشاد)
2) شعیب شاداب (ایم-فل عطا شاد)
3) حکیم بلوچ (شبیہ شاد (کتاب))
4) افضل مراد (کلیات عطاشاد (عطاشاد))
5) اے-آر داد (دل ءَ بلیں (کتاب))
عطا شاد شاعری ءِ دنیا ءِ نمیران،ابدمان ءُ زندگیں کارستے ءُ ما جاگھے نہ جاگھے آئی شاعری ءِ کسانیں کارست انت۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
اس سے ھوتی نہ کوئی بات عطا
اور اس بات کا چرچا ھوتا
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
ھم سو گئے شفق کو سمجھ کر چراگِ شب
اب تیرگی کو صبح کا مژدہ بنائیے
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
عطا بدن کی وہ کروٹ بھی نیم شب کیا تھی
تمام عمر اجلتا ھوں انقلابوں سے
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
عطا ھما انت منی روژنائی ءِ بندات
ھما کہ ماں راھسراں آسگوار چراگ
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
اے گیابان زراب بیت کہ نہ بیت
چو نہ کرزیت اے گہہ گہیں امروز
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
گش انت ھمے کہ ھر عھد ءَ را گوں بالاچ ئے
ھما کہ دژمن ءِ بدواھی ءَ بدی نہ گش انت

Share on :
Share

About Administrator

Check Also

CPEC would only be favorable for foreigners: Akhter Mengal

QUETTA: China Pakistan Economic Corridor (CPEC) has nothing to do with the native people; it …

Leave a Reply

'
Share
Share
Social Media Auto Publish Powered By : XYZScripts.com